[New] Islamic Status in Urdu for WhatsApp | Islamic Status

Here's the New collection of Islamic status in Urdu. Nowadays a huge WhatsApp, Facebook, Instagram, and other Social Media users in Pakistan search for Islamic status for his/her Facebook, WhatsApp, Instagram, and other Social Media status so we collect the best collection of Islamic status in Urdu for you. This is the best and a most beautiful collection of Islamic status in Urdu on the internet we already published the collection of 20+ best Islamic WhatsApp status in Urdu but in this collection, we collect the new and most beautiful collection of Islamic status in Urdu. You guys give lots of love on our previous collections so we collect this just only for you all, we hope you liked our this collection of Islamic status.


Islamic Status

[New] Islamic Status Collection in Urdu for WhatsApp

علیؑ سے بُغض بھی اور شوقِ جنت بھی 
عبادتوں کا بھی کوئی اصول ہوتا ہے


Ali say boghaz bhi our shooq-e-Jannat bhi
Ibadaton ka bhi koi usool hota hai

جا نشینِ سیّد ابرار کی باتیں کر
مصطفٰے کے پہلے پہلے پیار کی باتیں کریں


Janasheen-e-syed Abrar ki batein kar
Mustafa kay pehlay pehlay pyaar ki batein kar


دل میں کسی اور کو بسایا نہ جائے گا
ذکرِ رسولِ پاک بُھلایا نہ جائے گا


Dil mein kisi our ko basaya na jayega
Zkiray Rasool-e-pak bhulaya na jayega


 پھر دیں مدینے کی اجازت 
پھر دیدارِ مدینہ ہو جائے


Phir dein Madinay ki ijazzat
phir didaar-e-Madina ho jaye 


رُتبہ آپ ﷺ کا ہے سب سے عالی
آپ ﷺ ہی ہیں سب کے والی


Rutba Ap ka hai sab say aala
Ap hi hain sab kay wali


دنیا میں سب سے اُونچا میرا نام ہو جائے 
اُلفتِ نبی ﷺ میں اگر یہ زندگی تمام ہو جائے


Dunya mein sab say uncha mera naam ho jaye
Ulfat-e-Nabi mein agar ye zndagi tamaam ho jaye


عُمر گزر گئی لفظ ڈھونڈتے اے احمدﷺ
آپ کی تعریف کے لئے مگر کوئی لفظ نہیں ملا


Umar guzar gayi lafaz dhondtay ay Ahmed
Ap ki tareef kay liye magar koi lafz nahi mila


فرشتوں کو تیرے آگے جھُکایا ہے رب نے
تجھے اشرف المخلوقات بنایا ہے رب نے


Firishton ko teray agay jhukaya hai rab nay
Tuhjy ashraf-ul-makhloqaat banaya hai rab nay


اس سے پہلے کہ تو کاندھوں پہ اُٹھ جائے
بہتر ہے کہ تیرا سر سجدے میں جھُک جائے


Us say pehlay keh tu kaandhoon pay uth jaye
Behtar hai tera sar sajday mein jukh jaye


تمہارے چہروں پہ ہے دُھول اس قدر
مسلمانوں تم اپنے چہروں کو پہچان نہیں رہے


Tumharay chehron pay hai dhool is qadar
Musalmanon tum apnay chehron ko pehchaan nahi rahay


جب سے میں نے اپنے دل میں محمدﷺ کو بسایا
خو ش قسمت خود کو میں نے سب سے بڑھ کر پایا


Jab say mein nay apnay dil mein Muhammad ko basaya
Khush qismat khud ko mein nay sab say barh kar paya


گھر بار اور سب کچھ لُٹایا حسینؑ نے 
تب جاکر ہے بچایا اسلام کو حسینؑ نے


Ghar baar ur sab khuh lutaya Hussain nay
Tab ja kar hai bachaya Islam ko Hussain nay


آقا ﷺ سے جس کو پیار ہوتا ہے 
اُس کا بیڑا تو پھر پار ہوتا ہے


Aaqa say jis ko pyaar hota hai
Us ka beraa to phir paar hota hai


دیتا ہوں میں تو صدا تجھے
ہر پل اے خُدا تجھے


Deta hon mein to sada tujhy
Har pal ay Khuda tujhy


سنور جائے گی تیری زندگی 
دل محمدﷺ سے لگا کر تو دیکھو


Sawar jaye gi teri zindagi
Dil Muhammad say laga kar to dekho


آقا نے دِین دیا تھا بچایا حُسین نے
گردن کٹا کر اپنی وعدہ نبھایا حُسین نے


Aaqa nay deen diya tha bachaya Hussain nay
Gardan kata kar apni wada nibhaya Hussain nay


سجدے میں رو رو کر مانگیں ہیں دُعائیں
تُو بھی پکار اُن کو ،دے اُن کو ہی صدائیں


Sajday mein ro ro kar mangein hain duayen
Tu bhi pukaar un ko day un ko bhi sadayein


رحمت کے کھُل جائیں گے در ماہِ صیام آیا ہے
مرادیں آئیں گی بھرِ ،ماہِ صیام آیا ہے


Rehmat kay khul jayein gay dar mah-e-siyaam aya hai
Muradein ayein gi phir mah-e-siyaam aya hai


حُسن کی مثال محمد ﷺ ہیں لیکن
محمد ﷺ کی مثال کوئی حسن نہیں


Hussain ki misaal Muhammad hain lakin
Muhammad ki misaal koi Hussain nahi


یہ درس کربلا کا ہے
کہ خوف بس خدا کاہے


Ye draz Karbala ka hai
Keh khoof bas Khuda ka hai


آیا ہے حج کا موسم جا رہے ہیں قافلے اے اللہ
مجھ پر بھی کر دے کرم لگ جائے میری بھی حاضری


Aya hai Haj ka mosam ja rahe hain qafilay ay Khuda
Mujh per bhi kar day karam lag jaye meri bhi haziri


تمہارا ایک رب ہے پھر بھی تم اسے یاد نہیں کرتے 
لیکن اس کے کتنے بندے ہیں پھر بھی وہ تمہیں نہیں بُھولتا


Tumhara eik rab hai phir bhi tum usay yaad nahi kartay
Lakin us kay kitnay banday hain phir bhi wo tumhein nahi bhulta


قیامت تک رہے سجدے میں سر میرا اے خدا
کہ تیری نعمتوں کے شکر کے لئے یہ زندگی کا فی نہیں


Qayamat tak rahay sajday mein sar mera ay Khuda
Keh teri niyematon kay shukar kay liye ye zindagi kafi nahi


میرے اعمال پہ ملتا تو بھوکا رہتا
میری اوقات سے بڑھ کر وہ خدا دیتا ہے


Meray amaal pay milta to bhooka rehta
Meri auqaat say barh kar wo Khuda deta hai


مکانوں کے بنانے میں عمر ختم کر رہا ہے 
بسیں گے دوسرے اور حساب دے گا تُو


Makanon kay bananay mein umar khatam kar raha hai
Basein gay dusuray our hisaab dega tu


سر قلم کروا کر حُسین ؑ نے راہِ حق میں 
سر بلند کر دیا اسلام کا زمانے میں


Sar qalam karwa kar hussain nay rah-e-haq mein
Sar bulad kar diya Islaam ko zamanay mein


سجدے تو سب نے کیے تیرا نیا انداز ہے 
تُو نے وہ سجدہ کیا جس پر رب کو ناز ہے


Sajday to sab nay kiye tera naya andaaz hai
Tu nay wo sajda kiya jis per rab ko naaz hai


خوش نصیب ہے وہ جس کو شہادت ملے
شہادت خوش نصیب ہے جسے حُسین ؑ مل گئے


Khush naseeb hai wo jis ko shahadad milay
Shahadad khush naseeb hai jis ko hussain mi gaye


ناز جس پر کائنات کی ہر نماز کو تھا
وہ سجدہ پھر نہ دیکھا گیا حسینؑ کے بعد


Naaz jis per kayinaat ki har namaaz ko tha
Wo sajda phir na dekha gaya hussain kay baad


عجب مزاق ہے اسلام کی تقدیر کے ساتھ
کا ٹا حُسین ؑ کا سر۔۔۔ نعرہ تکبیر کے ساتھ


Ajab mazaaq hai Islaam ki taqdeer kay sath
Kata Hussain ka sar Narah Takbeer kay sath


انسان کو بیدار تو ہو لے نے دو
پھر ہر قوم پُکارے گی ہمارے ہیں حُسینؑ


Insaan ko beidaar to ho lay nay do
Phir har qoom pukaray gi hamaray hain Hussain



جو اپنی جاں گنوا دے حفاظتِ حق میں
اُسے تو دل کی لُغت میں حُسین کہتے ہیں


Jo apni jaan gawa day hifazat-e-haq mein
Usay to dil ki lughad mein hussain kehtay hain


یوں تو مانگنے خدا سے جنت گیا تھا میں
پھر کربوبلا کو دیکھ کر نیت بدل گئی

Yun to mangnay Khuda say Jannat gaya tha mein
Phir Karbubala ko dekh kar niyat badal gayi


میرا حُسین میری چشمِ تر میں رہتا ہے
عجیب شاہ ہے غریبوں کے گھر میں رہتا ہے


Mera Hussain meri chashm-e-tar mein rahta hai
Ajeeb shah hai ghareebon kay ghar mein rehta hai


جب بھی کبھی ضمیر کا سودا ہو 
ڈٹ جاؤ حُسین ؑ کے انکار کی طرح


Jab bhi zameer ka sodha ho
Dadd jayo Hussain kay inkaar ki tarah


اندازِ بندگی ہے نرالا حُسین کا
سجدوں میں لاجواب ہے سجدہ حُسین کا


Andaazay zindagi hai nirala Hussain ka
Sajdon mein la-jawaab hai sajda Hussain ka


رب کی توحید، کلمہ نبی ؐ کا، دلائے مرتضیٰ
سب کو بچانے چل پڑا قافلہ حُسین کا


Rab ki toheed, kalma Nabi ka, dilaye Murtaza
Sab ko bachanay chal para qafeela Hussain ka


تا حشر یہ خیال میرے دل کا چین ہے
یعنی میری نجات کا ضامن حسینؑ ہے


Ta hashar ye khayaal meray dil ka chein hai
Yani meri nijaat ka zamin Hussain hai


سجود آج بھی اس کو سلام کرتے ہیں
پڑھ گیا جو نماز طوقِ و زنجیر کے ساتھ


Sujood aj bhi us ko Islam kartay hai
Parh giya namaz tooq wa zanjeer kay sath


تیروں کے مصلّے پر وہ سجدائے شکرانہ
شبیرؑ نے بتلا دیا اسلام پہ مر جانا


Teeron kay musalnay per wo sajda-e-shukrana
Shabbir nay batla diya Islam pay mar jana


نہ یزید کی وہ جفا رہی نہ شمر کا وہ ستم رہا
جو رہا تو نام حُسین ؑ کا جسے زندہ رکھتی ہے کربلا


Nah yazeed ki wo jafa rahi nah shimir ka wo sitim raha
Jo raha tu naam Hussain ka jissay zinda rakhti hai Karbala


وفا جس کا پڑھے کلمہ اُسے عباسؑ کہتے ہیں
جسے سجدیں کریں سجدہ اُسے عباسؑ کہتے ہیں


Wafa jis ka parhay kalma usay Abbas kehtay hain
Jissay sajdein karein sajda usay Abbas kehtay hain


پوچھا جو مجھ سے کسی نے جنت کا راستہ
میں نے اُسے حُسین ؑ کا در بتا دیا


Pucha jo mujh say kisi nay Jannat ka raasta
Meinay usay Hussain ka dar bata diya

جُھکانا چاہا تھا جس سر کو شام والوں نے
شکست دیکھئے اس سر کو خود اٹھا کے چلے


Juhkana chaha tha jis sar ko shaam walon nay
Shikast dikhaye us sar ko khud utha kar chalay

اذان تو ہوتی ہے اب مگر نہیں کوئی مؤذن بلالؓ سا
سر بسجدہ تو ہیں مومن مگر نہیں کوئی زہرا ؑ کے لال سا


Azan to hoti hai magar nahi koi muazzin bilal sa
Sar ba Sajdha to hai magar nahi koi Zehra kay lal sa


قتلِ حُسین اصل میں مرگِ یزید ہے
اسلام زندہ ہوتا ہے ہر کربلا کے بعد


Qatilay Hussain asal mein marg-e-yazeed hai
Islam zindha ho hai har Karbala kay baad


کربلا سے بہت دُور ہے سکینہؑ کا مزار
آج تک باپ سے بیٹی کی جُدائی نہ گئی


Karbala say bohut duur hai Sakina ka mazaar
Aj tak baap say beti ki judayi nah gayi


رونے والا ہوں شہیدِ کربلا کی یاد میں
کیا درِ مقصد نہ دیں گے ساقی کوثر مجھے


Ronay wala hon Shaheed-e-Karbala ki yaad mein
Kiya dar-e-maqsad nah dein gay Saqi Kosar mujhy


کہہ دو غمِ حُسین منانے والوں سے
مومن کبھی شہدا کا ماتم نہیں کرتے


Keh do ghamay Hussain mananay walon say
Momin kabhi Shaheed ka matam nahi kartay


بھول جائیں گے ہر غم ،غم تیرا نہ بھولیں گے
کربلا نہ بھولیں گے با خدا نہ بھولیں گے


Bhool jayein gay har gham, gham tera nah bhoolein gay
Karbala nah boolein gay ba Khuda nah boolein gay


لفظوں میں کیا لکھوں شہادتِ حُسین محسن 
قلم بھی میرا رو دیا ہے


Lafzon mein kiya likhon Shahadatay Hussain Mohsin
Qalam bhi mera ro diya hai


افضل ہے قل جہا ن سے گھرانہ حُسین کا 
نبیوں کا تاجدار ہے نانا حُسین کا


Afzal hai kul jahan say Gharana Hussain ka
Nabiyon ka tajidaar hai Nana Hussain ka


سر دے کر دو جہاں کی حکومت خرید لی
مہنگا پڑا یزید کو سودا حُسین ؑ کا


Sar day kar do jahan ki hukumat khareed li
Mehenga paraa yazeed ko soda Hussain ka


ذکرِ حُسین آیا تو آنکھیں جھلک پڑیں
پانی کو کتنا پیار ہے اب بھی حُسین ؑ سے


Zkiray Hussain aya to ankhein jhalak parein
Pani ko kitna pyaar hai ab bhi Hussain say


خون سے چراغِ دین جلایا حُسینؑ نے
رسمِ وفا کو خوب نبھایا حُسین ؑ نے


Khoon say charaagh-e-Deen jalaya Hussain nay
Rasam-e-wafa ko khoob nibhaya Hussain nay


سب کچھ قربان کر دیا اللہ کی راہ میں حُسینؑ نے
اصغر ؑ سا پھول بھی نہ بچایا حُسینؑ نے


Sab kuch Qurbaan kar diya Allah ki raah mein Hussain nay
Asghar sa phool bhi na bachaya Hussain nay


کبھی دیکھ اپنے خمیر میں کبھی پوچھ اپنے ضمیر سے
جو مٹ گیا وہ یزید تھا اور جو نہ مٹ سکا وہ حُسینؑ ہیں


Kabhi dekh apnay khameer mein kabhi pouch apnay zameer say
Jo mit gaya wo yazeed tha our jo nah mit saka wo Hussain hai


ستارہ اب بھی فجر کا اُداس ہوتا ہے
سُنائی دیتی ہے اب بھی اذان اکبرؑ کی


Sitarah ab bhi fajir ka udaas hota hai
Sunayi deti hai ab bhi Azaan Akber ki

آواز دے رہی ہے یہ کربلا کی زمین
بس تھوڑے دن رہ گئے ہیں شکستِ یزید کو


Awaaz day rahi hai ye Karbala ki zameen
Bas thoray din reh gaye hain shikast-e-yazeed ko


باطل کے سامنے جو جُھکائے نہ اپنا سر
سمجھ لو اس کے دماغ کا مالک حُسین ہے


Batil kay saamanay jo juhkaye nah apna sar
Samajh lo us kay dimaagh ka malik Hussain hai


دلیلِ فتح تو دیکھ اے حُسینؑ کے قاتل
کہ جس سر کو جھُکانے آئے تھے اُسی سر کو اُٹھا کر چلے


Daleel-e-fatah to dekh ay Hussain kay qatil
Keh jis sar ko jhukanay aye thay usi sar ko utha kar chalay

Conclusion

We hope you also like this collection of new Islamic status in Urdu if you can't check our previous collection of 20+ best Islamic WhatsApp status in Urdu don't forget to check out we know you like that also and don't forget to show some love for us and share this because it gives us lots of motivation to collect more Islamic status in Urdu.

Post a Comment

Leave Your Comment Here.

Previous Post Next Post